زندگی کا دائرہ محدود ہے

زندگی کا دائرہ محدود ہے
سوچنا بھی اسلیے مسدود ہے
.ساتھ چل تو بھی ہمارے بے وجہ
تو ہماری منزل_مقصود ہے
.
یا خدا!ہونے کا اپنے دے نشاں
تو ہی بس اس دہر میں مفقود ہے
دور تم سے ہوگئی ہوں جب سے میں
رابطہ خود سے مرا مسدود ہے
ہم نے چاہا کوئی مخلص تو ملے
پر ہمارا چاہنا بے سود ہے
اقرا جبین

اس پوسٹ کو شیئر کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے