یہ حقیقت ہے مری ذات کا نقصان کیا

یہ حقیقت ہے مری ذات کا نقصان کیا
میں نے جس شخص پہ تا عمر بڑا مان کیا

شہر کی سمت نیا رستہ بنانے کے لیے
پیڑ کاٹے گئے اور گاؤں کو ویران کیا

یار دشمن سے ملے , سانس کو مفلوج کیا
حوصلہ ہارا گیا , جیت کا نقصان کیا

آخری بار ملا پہلی ملاقات میں وہ
ایک ھی شخص نے دو بار تھا حیران کیا

نیند آئے بھی احامر تو نہیں سو سکتا
آنکھ پر ایسے ترے خواب نے احسان کیا

رانا عثمان احا مر

اس پوسٹ کو شیئر کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے