رقص کرتے ہوئے سب ہوش بھلا دیتا ہیں

رقص کرتے ہوئے سب ہوش بھلا دیتا ہیں
دیر تک وجد میں رہتا ہے سراپا میرا
موسمِ سبز مجھے حیران کیے دیتا ہے
دل زمستان میں بھی پھول سا مہکا میرا
میں مغنی ہوں محبت کا مجھے دل سے سنو
ہجر میں رہتا ہے غم، زمزہ پیرا میرا
ایک شب زاد نے بسرام کیا تھا مجھ میں
بس کے دن، رات سا رہتا ہے ہمیشہ میرا
آئینہ عکس مرا دل سے لگائے رکھے
دھوپ رنگین کیے دیتی ہے سایہ میرا
مبشر سعید

اس پوسٹ کو شیئر کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے