پُر کیف مناظر ہیں دن رات مدینے میں

پُر کیف مناظر ہیں دن رات مدینے میں
رحمت کی برستی ہے برسات مدینے میں

میں آقاؐ کے روضے پر رو رو کے دُعا مانگوں
مل جاتی ہے بخشش کی سوغات مدینے میں

آقاؐ کے قدم چھو کر اُجلی ہے زمیں دیکھو
سورج کی طرح دیکھے ذرات مدینے میں

اب شہر مدینہ کی گلیوں میں بسیرا ہے
سب دور ہوئے دل کے خدشات مدینے میں

طیبہ کی فضاؤں میں اک نور کی چادر ہے
مٹ جاتے ہیں دل کے سب ظلمات مدینے میں

حالت پہ مری بھی ہو سرکارؐ کرم اتنا
لوگوں کے بدلتے ہیں حالات مدینے میں

اندر ہے عجب ہلچل آنکھوں میں نمی صابرؔ
قابو میں کروں کیسے جذبات مدینے میں

ایوب صابر

اس پوسٹ کو شیئر کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے