پھر کسی آس میں رہ کر دیکھیں

پھر کسی آس میں رہ کر دیکھیں
اک نیا درد ہی سہہ کر دیکھیں
ہم کو مل جائے کنارہ شاید
آؤ جذبات میں بہہ کر دیکھیں
میری نظروں سے بھی گر جائیں گے
اشک آنکھوں سے تو بہہ کر دیکھیں
ہم کو آرام نہیں خوابوں سے
جس خرابے میں بھی رہ کر دیکھیں
میں سعید اور مرے دل کا غبار
آؤ اک شعر تو کہہ کر دیکھیں
سعید خان 

اس پوسٹ کو شیئر کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے