فروری 5, 2023
nasir kazmi
ناصر کاظمی کی سوانح حیات
پیدائش  8 دسمبر 1925، انبالہ
والد محمد سلطان کاظمی
والدہ محمدی بیگم

انبالہ مسلم ہائی سکول سے میٹرک کیا، پھر اسلامیہ کالج لاہور میں بی اے تک تعلیم حاصل کی، لیکن بوجوہ امتحان نہ دے سکے۔ 1950 میں مجلہ ‘اوراقِ نو’ کے اور 1952 میں ‘ہمایوں’ کے مدیر بنے۔ 1957 میں اپنا رسالہ ‘خیال’ جاری کیا۔ 1958 میں محکمہ سماجی بہبود میں لائیژان آفیسر تعینات ہوئے اور ایک برس بعد محکمہ وِلیج ایڈ میں پبلسٹی آفیسر اور رسالہ ‘ہم لوگ’ کے مدیر مقرر ہوئے۔ اس کے بعد ریڈیو پاکستان لاہور کے ساتھ بطور سٹاف آرٹسٹ 1964 سے تا دمِ آخر منسلک رہے۔ 2 مارچ 1972 کو لاہور میں انتقال ہوا۔ پاکستان کے محکمہ ڈاک نے 2013 میں ناصِر کاظمی یادگاری ٹکٹ جاری کیا۔

  • برگِ نے ۔ ناصر کاظمی 1952
  • دیوانِ ناصر ۔ ناصر کاظمی ۔ 1973
  • پہلی بارش ۔ ناصر کاظمی ۔ 1975
  • نشاطِ خواب ۔ ناصر کاظمی ۔ 1977
  • سُر کی چھایا ۔ ناصر کاظمی ۔ 1981

مطبوعات

شعری مجموعے
برگِ نے 1952
دیوانِ ناصر  1973
پہلی بارش 1975
نشاطِ خواب 1977
سُر کی چھایا 1981
نثر
خشک چشمے کے کنارے 1982
 ‘ناصِر کاظمی کی ڈائری 1995
انتخاب:
انتخابِ ولؔی 1991
انتخابِ میرؔ 1989
انتخابِ نظیرؔ 1989
انتخابِ انشاؔ 1991
اس پوسٹ کو شیئر کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے