میری صبح میری رات رہنے دیتے

میری صبح میری رات رہنے دیتے
میرے ساتھ میری ذات رہنے دیتے
عمر بھر کا اپنا ساتھ تھا یہ ہمدم
عمر بھر کا اپنا سات رہنے دیتے
میری سوچ کا سب حُسن تم ہی رکھتے
اک ہنسی کا سوکھا پات رہنے دیتے
واہموں کو تم نے کیوں زبان دے دی؟
کچھ تو اپنے دل میں بات رہنے دیتے
جان بوجھ کر جو میرے نام لکھ دی
اپنے نام کی وہ مات رہنے دیتے
گر بگڑ گئی تھی بات، بن بھی جاتی
ہاتھ میں مرے تم ہات رہنے دیتے
عمر میں تمہارے ساتھ کاٹ لیتی
زندگی کو میرے سات رہنے دیتے
ناہید ورک

اس پوسٹ کو شیئر کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے