Mera Nahin To Wo Apna – مرا نہیں تو وہ اپنا ہی کچھ خیال کرے By Shahzad Nayyar

مرا نہیں تو وہ اپنا ہی کچھ خیال کرے

اسے کہو کہ تعلق کو پھر بحال کرے

نگاہ یار نہ ہو تو نکھر نہیں پاتا

کوئی جمال کی جتنی بھی دیکھ بھال کرے

ملے تو اتنی رعایت عطا کرے مجھ کو

مرے جواب کو سن کر کوئی سوال کرے

کلام کر کہ مرے لفظ کو سہولت ہو

ترا سکوت مری گفتگو محال کرے

بلندیوں پہ کہاں تک تجھے تلاش کروں

ہر ایک سانس پہ عمر رواں زوال کرے

وہ ہونٹ ہوں کہ تبسم سکوت ہو کہ سخن

ترا جمال ہر اک رنگ میں کمال کرے

میں اس کا پھول ہوں نیرؔ سو اس پہ چھوڑ دیا

وہ گیسوؤں میں سجائے کہ پائمال کرے

For More Shahzad Nayyar Urdu Poetry
Visit https://salamurdu.com/category/urdu-poetry/shahzad-nayyar

Leave A Reply

Your email address will not be published.

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More