محبوب کے بھی حبیب ہو جاؤ

محبوب کے بھی حبیب ہو جاؤ

سجدہ کرو اور قریب ہو جاؤ

جو باغ چہک رہا ہے دل میں

اس باغ کے عندلیب ہو جاؤ

اک بیش بہا کی جستجو میں

ہوتے ہو اگر غریب ، ہو جاؤ

توفیق بغیر کچھ نہیں ہے

کتنے ہی بڑے ادیب ہو جاؤ

سعود عثمانی

اس پوسٹ کو شیئر کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے