خدانے اپنے شواہد پہ سوچنے دیا تو

خدانے اپنے شواہد پہ سوچنے دیا تو
میں کھوج لوں گا اگر اس نے کھوجنے دیا تو
ہر ایک حسن کو دیکھیں گے حسنِ کل کی طرح
اگر تمھارے تقدس نے دیکھنے دیا تو
اجازت ایک ہی دروازہ کھولنے کی ہے
خدا نے ساتواں در مجھکو کھولنے دیا تو
کٹائو بڑھتا رہے گا ہماری آنکھوں کا
تری انا نے کناروں کو ٹوٹنے دیا تو
نکال لوں گا نقائص میں تیری جنت سے
زرا سی دیر مجھے اس میں گھومنے دیا تو
فیضان ہاشمی

اس پوسٹ کو شیئر کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے