متفرق دلچسپ معلومات

متفرق دلچسپ معلومات
آپ خواب میں صرف ان چہروں کو دیکھتے ہیں جنھیں آپ جانتے ہیں۔ *پندرہ منٹ ہنسنا جسم کے لیے اتنا ہی فائدہ مند ہے جتنا دو گھنٹے سونا۔ *کی بورڈ کی آخری لائن میں موجود بٹنوں سے آپ انگلش کا کوئی لفظ نہیں لکھ سکتے ۔ *سردی کی کھانسی میں چاکلیٹ کھانسی کے سیرپ سے پانچ گنا زیادہ بہتر اثر دکھاتی ہے۔ *جتنی مرضی کوشش کر لیں جو مرضیکر لیں آپ یہ یاد نہیں کر سکتے آپ کا خواب کہاں سے شروع ہوا تھا۔*زمین سے سب سے نزدیک ستارہ سورج ہے جو زمین سے 93 ملینمیل دور واقع ہے *مکھی ایک سیکنڈ میں 32 مرتبہ اپنے پر ہلاتی ہے *دنیا کے 26 ملکوں کو سمندر نہیں لگتا *مثانے میں پتھری کو توڑنے کا خیال سب سے پہلے عرب طبیبوں کو آیا تھا
*گھوڑا، بلی اور خرگوش کی سننے کی طاقت انسان سے زیادہ ہوتی ہے، یہ کمزور سے کمزور آواز سننے کے لیے اپنےکان ہلا سکتے ہیں*تیل کا سب سے پہلا کنواں پینسلوینیا امریکا میں 1859ء میں کھودا گیا تھا *کچھوا، مکھی اور سانپ بہرے ہوتے ہیں *تاریخ میں القدس شہر پر 24 مرتبہ قبضہ کیا گیا *دنیا کا سب سے بڑا پارک کنیڈا میں ہے *ہٹلر برلن کا نام بدل کر جرمینیا رکھنے کاارادہ رکھتا تھا *دنیا میں سب سے زیادہ پہاڑ سوئٹزر لینڈ میں پائے جاتے ہیں *دنیا کے سب سے کم عمر والدین کی عمر 8 اور 9 سال تھی، وہ 1910ء میں چین میں رہتے تھے۔ *تمام پھلوں اور سبزیوں کی نسبت تیز مرچ میں وٹامن سی کی مقدار سب سے زیادہ ہوتی ہے۔ *-فرعونوں کے زمانے کے مصر میں ہفتہ 10 دن کا ہوتا تھا *تتلی کی چکھنے کی حس اس کے پچھلے پاؤں میں ہوتی ہے *ٹھنڈا پانی گرم پانی سے زیادہ ہلکا ہوتا ہے۔ *دنیا کے ہر شخص کی اوسط فون کالز کی تعداد 1140 ہے *وہیل کی اوسط عمر 500 سال ہوتی ہے۔
*فرانس کے اٹھارہ بادشاہوں کا نام لوئیس تھا *دنیا پر سب سے پہلا گھر کعبہ معظمہ ہی بنایاگیا تھا۔ *ربڑ کے زیادہ تر درخت جنوب مشرقی ایشیا میں پائے جاتے ہیں *اگر موٹے گلاس میں گرم مشروب ڈال دیا جائے تو پتلے گلاس کی نسبت اس کے ٹوٹنے کے امکانات زیادہ ہوتے ہیںاٹھارویں صدی میں کیچپ بطور دواء استعمال ہوتا تھا *کوے کی بھی اوسط عمر پانچ سو سال تک ہوتی ہے۔ *اٹھارہ مہینوں کے اندر دو چوہےتقریباً 1 ملین اپنے ساتھی پیدا کر لیتے ہیں۔ *انسانوں کے برعکس بھیڑ کے چار معدہ ہوتے ہیں اور ہر معدہ انہیں خوراک ہضم ہونے میں مدد دیتا ہے۔ *مینڈک کبھی بھی اپنی آنکھیں بند نہیں کرتا، یہاں تک کہ سوتےہوئے بھی آنکھیں کھلی رہتی* ہیں۔
شارک کے جسم میں کوئی ایک بھی ہڈی نہیں ہوتی۔ *جیلی فش کے پاس دماغ نہیں ہوتا۔ *پینگوئن اپنی زندگی کا آدھا حصہ پانی میں گزارتے ہیں اور آدھا زمین (خشکی) پر *گلہری پیدا ہوتے وقت اندھی ہوتی ہے۔ *کموڈو، چھپکلی کی لمبی ترین قسم ہے۔ جس کی لمبائی تقریباً 3 میٹر تک ہوتی ہے۔ *کینگرو پیچھے کی جانب نہیں چل سکتے۔ *دنیا میں سب سے بڑا انڈہ شارک دیتی ہے۔ *دنیا میں سب سے ذہین جانور ایک پرندہ ہے، جسے انگریزی میں گرے پیرٹ اور اردو میں خاکستری طوطا کہا *جاتا ہے۔*پینگوئین ایک ایسا جانور ہے جو نمکین پانی کو میٹھے پانی میں تبدیل کرسکتاہے۔ گولڈ فش کو اگر کم لائٹ میں پکڑا جائے تو یہ اپنا رنگ کھودیتی ہے۔ *جیلی فش کے سر کو Bell کہا جاتا ہے۔ *ایک مرغی سال میں اوسطاً 228انڈے دیتی ہے۔
*بلیاں اپنی زندگی کا 66 فیصد حصہ سو کر گزارتی ہیں۔ *جھینگے کا خون بیرنگ ہوتا ہے لیکن جب یہ آکسیجن خارج کرتا ہے تو اسکا رنگ نیلا ہوجاتا ہے۔ بیل نیچے کے بجائے اوپر کی طرف زیادہ تیزی سے دوڑتے ہیں۔ *دنیا کے سب سے چھوٹے لال بیگ کا سائز صرف 3 ملی میٹر ہے۔ *شارک کے دانت ہر ہفتے گرتے ہیں۔ *دریائی گھوڑا ایک ہی وقت میں دو مختلفسمت میں دیکھنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ *برفانی ریچھ 25 میل فی گھنٹہ کی رفتار سے دوڑ سکتا ہے اور ہوا میں 6فٹ کی بلندی تک چھلانگ لگاسکتاہے۔*مچھلی کسی چیز کا ذائقہ چکھنے کیلئے اپنی دم اور پنکھ استعمال کرتی ہے۔
*ایسی سفید بلیاں جو نیلی آنکھوں والی ہوتی ہیں عام طور پر وہ بہری ہوتی ہیں۔ *افریقی ہاتھیوں کے 4 دانت ہوتے ہیں۔ *زرافہ جمائی نہیں لے سکتا۔ *ایک گونگا مستقل 3 سال سونے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ شاہد آفریدی نے جب تیز ترین سنچری کا ریکارڈ بنایا تو وہ بھارتی سٹار سچن ٹنڈولکر کا بیٹاستعمال کررہے تھے۔دنیا میں صرف ایک دن میں اوسطا 55ارب مشروبات استعمال کی جاتی ہیں *مینڈک کی زبان میں تین گنا بڑا شکار دبوچنے کی طاقت ہوتی ہے *دنیا کی تقریباً آدھی آبادی صرف پانچ ممالک چین، بھارت، پاکستان، بنگلہ دیش اور انڈونیشیا میں رہتی ہے *نابینا افراد ہماری طرح خواب نہیں دیکھتے۔ *مچھلی کی آنکھیں ہمیشہ کھلی رہتی ہیں کیونکہ اس کے پپوٹے نہیں ہوتے۔ *کیا آپ بحیرہ مردار کے متعلق یہ دلچسپ بات جانتے ہیں کہ اگر آپ اس سمندر میں گر بھی جائیں تو بھی آپ اس میں نہیں ڈوبیں گے۔*سونے کی جتنی زیادہ کوشش کریں نیند آنے کے چانس اتنے ہی کم ہیں۔*انسانی دماغ ستر فیصد وقت پرانی یادوں یا مستقبل کی سنہری یادوں کے خاکے بنانے میں گزارتا ہے۔

اس پوسٹ کو شیئر کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے