فروری 5, 2023
Aasnath Kanwal
آسناتھ کنول کی ایک اردو نظم

درد کے گہرے سناٹے میں

قریۂ جاں کے

بند کواڑ پہ دستک دے کر

ہلکی سی سرگوشی کر کے

کوئی تو پوچھے

اب تک زندہ رہنے والو

ہجر کے گہرے سناٹوں میں

اپنے آپ سے بچھڑے لوگو

کیسے زندہ رہ لیتے ہو

آسناتھ کنول

اس پوسٹ کو شیئر کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے