بارش

میں آوارہ بادل ہوں
تو ساون کی تیز ہوا
آؤ مل کر خوابوں کو تصویر کریں
جب تھک جائیں
قطرہ قطرہ
رم جھم رم جھم
خاک میں سوئی خوشبو کو بیدار کریں
رنگوں کو آزاد کریں!
میں آوارہ بادل ہوں
تو ساون کی تیز ہوا
مل کے بچھڑنا اپنی قسمت میں لکھا ہے!
سعید خان 

اس پوسٹ کو شیئر کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے