Badal Gaya Hay Sabhi Khuch

بدل گیا ہے سبھی کچھ اس ایک ساعت میں

ذرا سی دیر ہمیں ہو گئی تھی عجلت میں

محبت اپنے لیے جن کو منتخب کر لے

وہ لوگ مر کے بھی مرتے نہیں محبت میں

میں جانتا ہوں کہ موسم خراب ہے پھر بھی

کوئی تو ساتھ ہے اس دکھ بھری مسافت میں

اسے کسی نے کبھی بولتے نہیں دیکھا

جو شخص چپ نہیں رہتا مری حمایت میں

بدن سے پھوٹ پڑا ہے تمام عمر کا ہجر

عجیب حال ہوا ہے تری رفاقت میں

مجھے سنبھالنے میں اتنی احتیاط نہ کر

بکھر نہ جاؤں کہیں میں تری حفاظت میں

یہاں پہ لوگ ہیں محرومیوں کے مارے ہوئے

کسی سے کچھ نہیں کہنا یہاں مروت میں

اس پوسٹ کو شیئر کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے