Ab Khanam Ki Fikar

اب خانم کی فکر نہ کرنا ابو تم

اب خانم کی فکر نہ کرنا ابو تم
نیند کی گولیاں بند کر دی ہیں
تلخ دوائیاں ختم ہوئیں

وہ جو رات کو ڈرتی تھی ںا
آسماں پر اُڑتے تمبو دیکھتی تھی
دیوار پکڑ کے کہتی تھی وہ
’روکو، روکو، گھر چلتا ہے‘
ہول نہیں پڑتے اب اس کو
ایک ٹینک اچانک گھر میں گھس آیا تھا
جمعرات کے دن، تھوڑی سی، جو بھی ملی، دفنا آئے ہم

اب خانم کی فکر نہ کرنا ابو تم

گلزار

اس پوسٹ کو شیئر کریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے